تاریخی فلم فوٹیج

آزادی کے بعد ڈاخاؤ

میونخ کے شمال مغرب میں واقع ڈاخاؤ حراستی کیمپ پہلا باقاعدہ حراستی کیمپ تھا جسے نازیوں نے 1933 میں قائم کیا تھا۔ تقریباً 12 برس بعد 29 اپریل، 1945 کو امریکی مسلح افواج نے کیمپ کو آزاد کرایا۔ اُس وقت کیمپ میں بھوک و افلاس سے متاثرہ 30,000 کے لگ بھگ قیدی موجود تھے۔ یہاں دکھائی جانے والی فلم کی تدوین اصل فوٹیج سے کی گئی تھی جو اتحادیوں کے کیمرہ مین نے اُس وقت بنائی تھی جب کیمپ کو آزاد کرانے والے فوجی ڈاخاؤ میں داخل ہو رہے تھے۔ یہ فوٹیج امپیریل وار میوزیم سے 1984 میں ملی تھی اور اسے کبھی بھی مکمل نہیں کیا جا سکا تھا۔

مکمل نقل

بیلسن کی طرح یہاں بھی لوگ بھوگ سے آشنا تھے۔ مرد کمزور ہوتے گئے۔ وہ بیمار پڑتے گئے حتیٰ کہ وہ موت کا شکار ہوتے ہوئے فرش پر گر پڑے۔ مثال کے طور پر صرف ہٹ نمبر 30 میں 24 گھنٹوں میں 72 اموات واقع ہوئیں۔


  • Imperial War Museum - Film Archive
آرکائیوز کی تفصیلات دیکھیں

یہ صفحہ مندرجہ ذیل مقامات پر بھی دستیاب ہے:

Thank you for supporting our work

We would like to thank The Crown and Goodman Family and the Abe and Ida Cooper Foundation for supporting the ongoing work to create content and resources for the Holocaust Encyclopedia. View the list of all donors.