تفصیلات
نقشے

جرمنی سے یہودیوں کی ہجرت، 1933-1940

سن 1933 اور 1939 کے درمیان جرمنی میں یہودیوں کو گرفتار کرنے، انکا اقتصادی بائیکاٹ کرنے، شہریت اور شہری حقوق سے محروم کرنے، حراستی کیمپوں میں قید کرنے، تشدد کرنے اور منظم قتل کے پوگروم کرسٹل ناخٹ ("ٹوٹے ہوئے شیشوں کی رات") کا شکار بنایا گيا۔ یہودیوں نے نازیوں کے اس ظلم و ستم پر متعدد طریقوں سے رد عمل ظاہر کیا۔ جرمن معاشرے سے زبردستی الگ کر دینے کے بعد جرمن یہودی خود اپنے اداروں اور سماجی تنظیموں کی جانب راغب ہوئے اور اُنہوں نے اُنہیں وسعت دی۔ تاہم بڑھتے ہوئے مظالم اور جسمانی تشدد کے نتیجے میں بہت سے یہودی جرمنی سے فرار ہو گئے۔ اگر امریکہ اور برطانیہ یہودیوں کو قبول کرنے پر تیار ہوتے تو مزید یہودی بھی جرمنی چھوڑنے میں کامیاب ہو سکتے تھے۔


  • US Holocaust Memorial Museum

شیئر کریں

Jewish emigration from Germany, 1933-1940 [LCID: wor79170]

Thank you for supporting our work

We would like to thank The Crown and Goodman Family and the Abe and Ida Cooper Foundation for supporting the ongoing work to create content and resources for the Holocaust Encyclopedia. View the list of all donors.