تفصیلات
نقشے

یہودی بستیوں اور کیمپوں میں یہودی مسلح مزاحمت، 1941-1944

سن 1941 اور 1943 کے درمیان نازیوں کے مقبوضہ مشرقی یورپ میں 100 سے زیادہ یہودی بستیوں میں خفیہ مزاحمتی تحریکوں نے جنم لیا۔ ان کا بنیادی مقصد بغاوت کو منظم کرنا، یہودی بستیوں کو توڑنا اور جرمنی کے خلاف لڑنے کیلئے حامی جماعتوں میں شامل ہونا تھا۔ یہودی جانتے تھے کہ بغاوت جرمنوں کو نہیں روک سکے گی اور صرف لڑنے والوں کی ایک قلیل تعداد ہی فرار ہو کر حامی جماعتوں میں شامل ہونے میں کامیاب ہو سکے گی۔ پھر بھی یہودیوں نے مزاحمت کا فیصلہ کیا۔ اس کے علاوہ، انتہائی خراب حالات میں بھی یہودی قیدی نازی حراستی کیمپوں میں حتی کہ ٹریبلینکا، سوبیبور اور آشوٹز جیسی قتل گاہوں میں بھی مزاحمت اور بغاوت شروع کرنے میں کامیاب ہو گئے۔ دیگر بغاوتیں کروس زائنا (1942 )، مینسک مازوویکی (1943 ) اور جانوسکا (1943 ) جیسے کیمپوں میں منظم کی گئیں۔ کئی درجن کیمپوں میں قیدیوں نے فرار ہو کر حامی جماعتوں میں شمولیت کے اقدامات کئے۔


ٹیگ


  • US Holocaust Memorial Museum

شیئر کریں

Jewish armed resistance in ghettos and camps, 1941-1944 [LCID: pol75480]

Thank you for supporting our work

We would like to thank The Crown and Goodman Family and the Abe and Ida Cooper Foundation for supporting the ongoing work to create content and resources for the Holocaust Encyclopedia. View the list of all donors.